Ptosis آنکھ کا پورا نہ کھل سکنا: وجوہات اور علاج

Ptosis کِسے کہتے ہیں؟

یہ وہ کیفیت ہے جس میں دیکھنے میں آنکھوں کا سائز ایک جیسا نظر نہیں آتا۔ عام طور پر ایک آنکھ  دوسری کے مقابلے میں چھوٹی نظر آتی ہے۔ بعض اوقات دونوں آ نکھیں ہی چھوٹی نظر آتی ہیں۔ یہ بیماری بہت عام ہے۔ بالعموم بچوں میں یہ چیز موجود ہوتی ہے بہت سی پریشانی کا باعث بنتی ہے۔ اکثر اوقات والدین اِس بات پر پریشان ہوتے ہیں کہ کہیں آنکھ چھوٹی تو نہیں رہ گئی۔ پھر دوسری پریشانی یہ ہوتی ہے کہ کیا اِس کا بچے کی نظر پر تو اثر نہیں پڑے گا۔ ذیل کی کُچھ تصویریں اِس کیفیت کو ظاہر کر رہی ہیں: 

اِس میں بنیادی نقص کیا ہوتا ہے؟

اصل میں آنکھ چھوٹی نہیں ہوتی بلکہ ایک آنکھ پوری طرح کھُلتی نہیں ہے جس کے باعث وہ چھوٹی نظر آتی ہے۔ پپوٹے کو اوپر نیچے کرنے اور آنکھ کو کھولنے کا کام ایک عضلہ کرتا ہے جسے لیویٹرمسل  Levator muscle کہتے ہیں۔ اگر اِس عضلے میں کوئی نقص پڑ جائے تو وہ آنکھ پوری طرح کھول نہیں سکتا جس سے آنکھ چھوٹی نظر آتی ہے۔ یہ عضلہ کہاں ہوتا ہے؟ ذیل کی تصویروں میں دیکھا جا سکتا ہے: 

سُرخ تیر مسل کی طرف اشارہ کررہے ہیں

اس عضلہ کے خراب ہونے کا سبب کیا ہوتا ہے؟

  • سب سے اہم وجہ تو یہ ہوتی ہے کہ پپوٹوں کے اِس پٹھے کی پیدائشی طور پر ساخت ہی ناقص ہوتی ہے۔ کئی میں بنتا تو صحیح ہے لیکن بعد میں اِس کی نشوونما ناقص رہ جاتی ہے۔ یعنی یہ عضلہ یا تو بنتا ہی کمزور ہے یا پھر اِس کی گروتھ نارمل نہیں ہوتی۔

  • کئی لوگوں میں چوٹ لگنے سے یہ پٹھہ ابنارمل ہو جاتا ہے۔

  • بعض لوگوں میں اِس عضلہ کو کنٹرول کرنے والی عصب بیمار ہو جاتی ہے جس سے ایک قسم کا فالج ہو جاتا ہے جس کے نتیجے میں عضلہ کمزور ہو جاتا ہے اور اپنا کام نہیں کر پاتا۔

  • کئی لوگوں کے پپوٹے کے اندر گِلٹی بن جاتی ہے جو اِس عضلہ کی کارکردگی کو متأثر کر دیتی ہے۔

کیا یہ تکلیف لا علاج ہوتی ہے؟ کیا اپریشن کے علاوہ بھی کوئی علاج ہوتا ہے؟

اہم ترین چیز تو یہ ہے کہ عضلہ کی کمزوری کا سبب تلا ش کیا جائے اور اگر اُس کو دور کرنا ممکن ہو تو اُس کو دور کیا جائے۔ بہت سارے مریضوں میں کو شش کرنے سے کوئی نہ کوئی قابلِ علا ج وجہ مل جاتی ہے لیکن زیادہ تر مریضوں میں یا تو وجہ مل ہی نہیں پاتی اور اگر مل جائے تو وہ سبب قابلِ علاج نہیں ہوتا۔ اِس لئے اکثریت کا علاج صرف عضلے کی مرمت ہی سے کیا جاتا ہے۔ عضلے کی مرمت اپریشن کے ذریعے کی جاتی ہے۔ اپریشن کر کے جو کمزور پٹھے کا کُچھ حصہ کاٹ دیا جاتا ہے جِس سے آنکھ بہتر طریقے سے کھُلنا شروع ہو جا تی ہے اور پپوٹا اوپر کی پوزیشن پر رہنا شروع کر دیتا ہے۔

زیادہ تر وُہی اپریشن کیا جاتا ہے جس کی تفاصیل نیچے دکھائی گئی ہیں۔ تاہم بعض دیگر قسم کے اپریشن بھی کئی مریضوں کے علاج کیلئے کئے جاتے ہیں۔  

Ptosis اپریشن کے مختلف مراحل

اگرآپ پپوٹوں کے گرنے اور آنکھیں پوری نہ کھل سکنے کی تکلیف سے متعلق مزید کوئی سوال پوچھنا چاہتے ہوں تو اُس کو کمنٹ کے خانے میں لکھ کر پوسٹ کر دیں انشاءاللہ انہی صفحات میں جواب دینے کی کوشش کی جائے گی۔ اسی طرح اپنی رائے، تبصرہ یا تجویز کو بھی کمنٹ میں لکھ کر پوسٹ کردیں میں بہت ممنون اور مشکور ہوں گا۔

15 Replies to “Ptosis آنکھ کا پورا نہ کھل سکنا: وجوہات اور علاج”

  1. میری آنکھ کا پپوٹا گرا ہوا ہے. آنکھ پوری نهیں کھلتی اور ایک سائیڈ پر گھوم بھی جاتی ہے. یہ مسئلہ 6 ماہ کی عمر سے ہے، اب میری عمر 46 سال ہے. کیا اس کا کوئی علاج ممکن ہے؟

اگر کوئی سوال آپ پوچھنا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں۔ اپنی رائےیا تجویز سے مجھے آگاہ فرمانا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں میں انشاءاللہ جلد از جلد آپ سے رابطہ کروں گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.