ٹوسس کا اپریشن ہونے کے بعد کی ہدایات

 

Ptosis اپریشن کے بعد کی ہدایات

  1. سب سے پہلی بات یہ ہے کہ شفا دینے والا اللہ تعالی ہے اِس لئے اُس سے مسلسل دُعا کرتے رہیں۔ اور جِتنا فائدہ ہوتا جائے اُتنا اللہ کا شکر دا کرتے جائیں کیونکہ شکر کرنے اور اِحسان کی قدر کرنے سے اللہ تعالی خوش ہوتے ہیں اور اپنی عطاٶں میں اضافہ کرتے ہیں۔ اِس سے توقع ہے کہ جلد از جلد اور مکمل شفاء مل جائے گی۔ 

  2. اگر آپ کو شُوگر، بلڈ پریشر، دمہ یا کوئی اور دائمی بیماری ہو تو اُس کی دوائیاں بند نہ کریں بلکہ پہلے سے بھی زیادہ احتیاط سے اُس کا علاج کریں تاکہ آنکھ کے اپریشن میں کوئی پیچیدگی پیدا نہ ہو۔

  3. اپریشن کے بعد کم ازکم ایک ہفتہ آنکھ کو عام پانی سے صاف نہ کریں۔ خصوصاً صابن یا شیمپُو آنکھ میں نہیں جانا چاہئے۔ 

  4. روزانہ صبح صاف روئی کو پانی میں اُبالیں؛ اُبلنے کا وقت قریباً آدھا گھنٹہ ہونا چاہئے۔ پھر اُسے ٹھنڈا کریں؛ جب نیم گرم ہو جائے تو اُس روئی سے ایک دفعہ آنکھ کو صاف کر لیں۔ بعد میں آنکھ کی صفائی کے لئے رومال وغیرہ اِستعمال کرنے کی بجائے ٹشو پیپر اِستعمال کریں اور ایک صفحہ اِستعمال کرکے پھینک دیں اُسے باربار اِستعمال نہ کریں۔

  5. مُجوّزہ قطرے اندازے سے ڈالنے کی بجائے گھڑی دیکھ کر بتائے گئے وقفے کے مطابق آنکھ میں ڈالیں۔ اِسی طرح کھانے والی ادویات کو بھی بڑی باقائدگی سے اِستعمال کریں۔ اپریشن کے بعد کے ابتدائی دن بہت ہی اہم ہوتے ہیں۔ اِس دوران دوائی کے اِستعمال میں بےاِحتیاطی یا بےقائدگی بعض اوقات کسی بڑی پریشانی میں مبتلا کر دیتی ہے کیونکہ نہ جراثیم کسی کا لحاظ کرتے ہیں اور نہ ہی دوائی۔

  6. جُھکنے اور وزن اُٹھانے کی کوئی اِحتیاط نہیں۔

  7. آنکھ کو ملنے سے خصوصی پرہیز کریں۔

  8. نماز کی ادائیگی میں بالکل تعطّل نہیں آنا چاہئے البتّہ آنکھ کا دو ہفتے تک مسح کرتے رہیں۔

  9. چُبھن، یا معمول سے کُچھ زیادہ پانی آنا ایک قدرتی امر ہے اِس سے نہ گبھرائیں۔ البتّہ اِن میں سے کوئی علامت بہت زیادہ ہو یا کوئی اور علامت نئے سرے سے پیدا ہو جائے یا نظر بہت زیادہ کم ہونے لگے تو فی الفور رابطہ کریں بالکل تاخیر نہ کریں۔

  10. اِس اپریشن کے بعد کُچھ عرصہ سُرخی موجود رہتی ہے۔ اِس سے پریشان نہ ہوں اِنشاءللہ چند دنوں میں ختم ہو جائے گی۔

  11. پپوٹے کی مرمت کے باعث اِس میں سوجھن ہو جاتی ہے، اِس سے نہ گھبرائیں یہ جلد ٹھیک ہو جائے گی۔ اِسی سوجھن کے باعث ابتدائی دنوں میں آنکھ متوقع مقدار سے ذرا کم کُھلتی ہے جو سوجھن ختم ہونے کے ساتھ ساتھ بہتر ہوتی جاتی ہے۔

  12. بہت زیادہ لیٹے رہنے کی ضرورت نہیں بلکہ چہل قدمی کرنا صحت کے لئے مفید ہوتا ہے۔

  13. کھانے پینے کے حوالے سے کوئی خصوصی اِحتیاط نہیں ہے؛ البتّہ دیگر بیماریوں کے لئے جو اِحتیاطیں بتائی گئی ہیں وہ ضرور کریں۔

  14. بے ہوشی کی صورت میں اپریشن کے قریباً چھ گھنٹے بعد تک کھان پلانا منع ہوتا ہے۔

  15. گھر میں تڑکا لگانے یا دیگر معمول کی سرگرمیوں کو معطّل کرنے کی کوئی ضرورت نہیں۔

  16. آنکھ میں جو ٹانکے لگائے گئے ہیں اُن کو عموماً نکالا نہیں جات بلکہ وُہ خود بخود جذب ہو جاتے ہیں، اِس دوران وقتاً فوقتاً آنکھ کا معائنہ کروانا ہوگا تاکہ اگر کوئی پیچیدگی پیدا ہونے لگے تو فوراً اُس پر قابو پایا جا سکے۔

  17. اپریشن ہونے کے کافی عرصہ بعد تک پپوٹے کے صحیح ہونے کا عمل جاری رہتا ہے، اِس لئے اگر فوری طور پر اگر آنکھ کا کُچھ  چھوٹا پَن موجود ہو تو پریشان نہ ہوں اِنتظار کریں اِنشاءاللہ آہستہ آہستہ مزید بہتری ہو جائے گی۔

اگر کوئی سوال آپ پوچھنا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں۔ اپنی رائےیا تجویز سے مجھے آگاہ فرمانا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں میں انشاءاللہ جلد از جلد آپ سے رابطہ کروں گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.