ٹانکوں والا ویٹریکٹومی اپریشن ہونے کے بعد کی ہدایات

بذریعہ 20-G آلات  ویٹریکٹومی اپریشن کے بعد کی ہدایات

  1. سب سے پہلی بات یہ ہے کہ شفا دینے والا اللہ تعالی ہے اِس لئے اُس سے مسلسل دُعا کرتے رہیں۔ اور جِتنا فائدہ ہوتا جائے اُتنا اللہ کا شکر ادا کرتے جائیں کیونکہ شکر کرنے اور اِحسان کی قدر کرنے سے اللہ تعالی خوش ہوتے ہیں اور اپنی عطاؤں میں اضافہ کرتے ہیں۔ اِس سے توقع ہے کہ جلد از جلد اور مکمل شفاء مل جائے گی۔ 

  2. اگر آپ کو شُوگر، بلڈ پریشر، دمہ یا کوئی اور دائمی بیماری ہو تو اُس کی دوائیاں بند نہ کریں بلکہ پہلے سے بھی زیادہ احتیاط سے اُس کا علاج کریں تاکہ آنکھ کے اپریشن میں کوئی پیچیدگی پیدا نہ ہو۔

  3. اپریشن کے بعد کم ازکم ایک ہفتہ آنکھ کو عام پانی سے صاف نہ کریں۔ خصوصاً صابن یا شیمپُو آنکھ میں نہیں جانا چاہئے۔ 

  4. روزانہ صبح صاف روئی کو پانی میں اُبالیں؛ اُبلنے کا وقت قریباً آدھا گھنٹہ ہونا چاہئے۔ پھر اُسے ٹھنڈا کریں؛ جب نیم گرم ہو جائے تو اُس روئی سے ایک دفعہ آنکھ کو صاف کر لیں۔ بعد میں آنکھ کی صفائی کے لئے رومال وغیرہ اِستعمال کرنے کی بجائے ٹشو پیپر اِستعمال کریں اور ایک صفحہ اِستعمال کرکے پھینک دیں اُسے باربار اِستعمال نہ کریں۔

  5. مُجوّزہ قطرے اندازے سے ڈالنے کی بجائے گھڑی دیکھ کر بتائے گئے وقفے کے مطابق آنکھ میں ڈالیں۔ اِسی طرح کھانے والی ادویات کو بھی بڑی باقائدگی سے اِستعمال کریں۔ اپریشن کے بعد کے ابتدائی دن بہت ہی اہم ہوتے ہیں۔ اِس دوران دوائی کے اِستعمال میں بےاِحتیاطی یا بےقائدگی بعض اوقات کسی بڑی پریشانی میں مبتلا کر دیتی ہے کیونکہ نہ جراثیم کسی کا لحاظ کرتے ہیں اور نہ ہی دوائی۔

  6. تین ہفتے تک آگے کو نہ جُھکیں اور نہ وزن اُٹھائیں۔

  7. نماز کی ادائیگی میں بالکل تعطّل نہیں آنا چاہئے البتّہ آنکھ کا دو ہفتے تک مسح کرتے رہیں۔

  8. معمولی سُرخی، چُبھن، یا معمول سے کُچھ زیادہ پانی آنا ایک قدرتی امر ہے اِس سے نہ گبھرائیں۔ البتّہ اِن میں سے کوئی علامت بہت زیادہ ہو یا کوئی اور علامت نئے سرے سے پیدا ہو جائے یا نظر بہت زیادہ کم ہونے لگے تو فی الفور رابطہ کریں بالکل تاخیر نہ کریں۔

  9. کھانے پینے کے حوالے سے کوئی خصوصی اِحتیاط نہیں ہے؛ البتّہ دیگر بیماریوں کے لئے جو اِحتیاطیں بتائی گئی ہیں وہ ضرور کریں۔

  10. گھر میں تڑکا لگانے یا دیگر معمول کی سرگرمیوں کو معطّل کرنے کی کوئی ضرورت نہیں۔

  11. آپ کی آنکھ میں جو ٹانکے لگائے گئے ہیں اُن کو عموماً نکالا نہیں جاتا یہ خود بخود ہی جذب ہو جاتے ہیں۔ قوی اُمید ہے آپ کی نظر ایک یا دو ہفتوں میں بہتر ہونا شروع ہو جائے گی؛ اِس دوران میں آپ کو وقتاً فوقتاً معائنہ کروانا ہوگا۔ تاہم نظر کی بہتری کا اِنحصار اِس بات پر ہے کہ پردہ بیماری سے کِس حد تک متاثر ہوا ہے۔ بہتری کے عمل کو عموماً تین مہینے لگ جاتے ہیں۔

  12. اگر پردہ کو اپنی جگہ پر برقرار رکھنے کے لئے سیلیکان آئل ڈالا گیا ہو تو نظر کُچھ اور زیادہ کمزور ہوتی ہے جو کہ اِس دوائی کے نکالنے کے بعد مزید بہتر ہو جاتی ہے۔ یہ دوائی کم ازکم تین مہینے ضرور آنکھ میں رکھنی پڑتی ہے۔ بہت سے خوش افراد کی آنکھوں کا پردہ بعد میں اِس دوائی کے بغیر بھی اپنی جگہ پر قائم رہتا ہے۔ لیکن بہت سارے لوگوں کی آنکھوں میں یہ مستقل طور بھی رکھنا پڑتا ہے۔

  13. اگر پردہ کو اپنی جگہ پر رکھنے کے لئے گیس ڈالی گئی ہو تو اُسے نکالنے کی ضرورت نہیں ہوتی وہ خود بخود جذب ہو جاتی ہے۔ البتّہ اُس سے زیادہ سے زیادہ فائدہ حاصل کرنے کے لئے کُچھ عرصہ کے لئے سر اور آنکھ کو خصوصی پوزیشنوں میں رکھنا پڑتا ہے۔ یہ عمل اگرچہ مشکل ہے لیکن اِس کے نتیجے میں پردہ اپنی جگہ پر بیٹھ جاتا ہے اور جُڑ جاتا ہے۔ اِس دوران اگر درد زیادہ شروع ہو جائے تو فوراً رجوع کریں کیونکہ ہو سکتا ہے دوائی بدلنی پڑے یا گیس کی مقدار کو کم کرنا پڑے۔

  14. اگر سیلیکان Tyre یا Band اُکھڑے ہوئے پردے کو باہر سے دباٶ دینے کے لئے اِستعمال کئے گئے ہوں تو اُن کو نکالا نہیں جاتا- یہ ایسے پردوں میں لگائے جاتے ہیں جو بہت زیادہ کمزور ہو چکے ہوں اور مستقل سہارا چاہتے ہوں۔

  15.   کئی دفعہ اپریشن کے کُچھ عرصہ بعد پردے کی مضبوطی کے لئے لیزر لگانے کی بھی ضرورت پڑتی ہے۔

  16. پردہ اُکھڑنے کی بہت ساری صورتوں میں دوسری آنکھ کا علاج بھی ضروری ہوتا ہے؛ کیونکہ ایک ہی بیماری دونوں پردوں کو بیک وقت متاثر کررہی ہوتی ہے تاہم ایک پہلے زیادہ متاثر ہو جاتا ہے دوسرا بعد میں۔ یہ وقفہ اکثر اوقات بڑی خوش قسمتی ثابت ہوتا ہے کیونکہ جو آنکھ ابھی تک متاثر نہیں ہوئی یا تھوڑی متاثر ہوئی ہے اُسے مزید خراب ہونے سے بچایا جا سکتا ہے۔ 

اگر کوئی سوال آپ پوچھنا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں۔ اپنی رائےیا تجویز سے مجھے آگاہ فرمانا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں میں انشاءاللہ جلد از جلد آپ سے رابطہ کروں گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.