Floater in front of eyes آنکھوں کے سامنے مختلف داغ نظر آنا

13428.MemberLogo

فلوٹرز 

کئی لوگوں کی شکائت ہوتی ہے کہ اُن کی آنکھوں کے سامنے نکتے سے چلتے پھرتے نظر آتے ہیں۔ بعض لوگوں کو دھاگے سے بھی نظر آتے ہیں۔ کئی لوگوں کو حرکت کرتا ہوا  دائرہ سا نظر آتا ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ فلوٹرز کی پریشانی کی وجہ سے ڈاکٹرز کے پاس آنے والے مریضوں کی تعداد بہت زیادہ ہوتی ہے۔  درج  ذیل چند تصویروں مریضوں کی بیان کردہ شبیہیں دکھائی گئی ہیں:

 

عام طور پر یہ نظر تو اچانک آنا شروع ہو جاتے ہیں لیکن سالوں تک جان نہیں چھوڑتے۔ 

کیا یہ فلوٹرز آنکھوں کی کسی خطرناک بیماری کا آغاز ہوتے ہیں؟

زیادہ تر لوگوں میں یہ کسی بیماری کے بعد شروع ہوتے ہیں مثلاً چند دن تک شدید بخار میں مبتلا ہو گئے جب اِس سے صحت یاب ہوئے تو انکشاف ہوا کہ ایک مخلوق ہر وقت آنکھوں کے سامنے ڈانس کرتی رہتی ہے۔ لوگ ڈاکٹر کے پاس جاتے لیکن ڈاکٹر صاحبان بھی اکثر اوقات مطمئن نہیں کر پاتے۔ وہ کوئی خاص تکلیف بھی نہیں بتاتے اور نہ ہی علاج بتاتے ہیں بس یہی  کہتے ہیں کوئی بات نہیں۔ اِس سے اکثر لوگ مطمئن نہیں ہوتے۔ وہ کئی داکٹروں کے پاس جاتے ہیں۔ کئی راتیں جاگتے ہیں ، کئی اندیشوں کے دیو اُن کی آنکھوں کے سامنےوقتاً فوقتاً آ دھمکتے ہیں۔ اور بہت سے لوگ پھر اِسی تکلیف کا علاج کرانے حکیموں ، ہومیوپیتھ ڈاکٹروں اور تعویز گنڈے کرنے والوں کے پاس پہنچ جاتے ہیں۔ 

تاہم کئی لوگوں کی کہانی اِس سے مختلف بھی ہوتی ہے۔ اُن کو بھی اِسی طرح اچانک فلوٹرز نظر آنے شروع ہوتے ہیں لیکن پھر نظر شدید کم ہو جاتی ہے۔ کبھی ایک اپریشن ہوتا ہے اور کبھی دوسرا۔ کئی بیچارے تو اِن ساری تکلیفوں کے بعد بھی صحیح نظر نہیں حاصل کر پاتے۔ کئی یہ سننے پر مجبور ہوتے ہیں کہ “آپ لیٹ آئے ہیں جب آپ کو فلوٹر نظر آنے شروع ہوئے تھے تو فوراً آپ کو آ جانا چاہئے تھا ، اب آپ بہت لیٹ ہو چکے ہیں“۔

دراصل فلوٹرز زیادہ تر لوگوں میں بے ضرر ہوتے ہیں۔ نہ تو اِن کے کوئی نقصانات ہوتے ہیں اور نہ ہی اِن کا کوئی علاج ہوتا ہے۔ لیکن کئی لوگوں میں فلوٹرز دراصل کئی خطرناک قسم کی بیماریوں کا نکتہٴ آغاز ہوتے ہیں۔ جن کا اگر بروقت علاج ہو جائے تو  وہ آگے بڑھنے سے رُک جاتی ہیں۔ 

فلوٹرز کی وجہ سے اور کیا تکالیف ہو سکتی ہیں؟

  • فلوٹرز درد ، سُرخی یا خارش جیسی علامات کا باعث نہیں ہوتے ۔
  • اگر فلوٹر بہت بڑے سائز کا ہو تو نظر پر اثر انداز ہو سکتا ہے۔ آپ کی نظر کے سامنے ایک دھبے کی شکل میں نظر آسکتا ہے اور یوں جتنے حصے میں وہ موجود ہو اتنے حصے میں  سامنے کی چیز دھندلی نظر آئے گی۔
  • فلوٹرز اُس وقت زیادہ نمایاں ہو کر نظر آتے ہیں جب ہم کسی روشن چیز کی طرف دیکھ رہے ہوتے ہیں مثلاً صاف آسمان کی طرف دیکھتے ہوئے یا کسی سفید کاغذ کیطرف دیکھتے ہوئے۔
  • بڑے فلوٹرز ڈرائیونگ میں بھی مشکل کا باعث شکتے ہیں کیونکہ اُن کی وجہ سے رات کو روشنیاں پھیل جاتی ہیں جس سے نظر کو ایک جگہ پر مرکوز رکھنا مشکل ہو جاتا ہے۔  

اِن کی کیا وجوہات ہوتی ہیں؟

فلوٹرز اُس وقت نظر آتے ہیں جب وِٹریَس Vitreous میں کوئی ایسی چیز آ جاتی ہے جو مکمل شفّاف نہیں ہوتی ۔ ایسی چیز کا سایہ پردہٴ بصارت پر بننے لگتا ہے جو پھر ہمیں نظر آنے لگتا ہے۔ اور وِٹریَس چونکہ جَیلی کی طرح کا ہوتا ہے یا پھر گاڑھے محلول کی شکل اِختیار کر لیتا ہے اِس لئے جو چیز اِس میں ہوتی ہے وہ حرکت کرتی رہتی ہے بلکہ صحیح الفاظ میں تیرتی رہتی ہے اِس لئے اِس کا نام فلوٹرز رکھا گیا ہے یعنی “تیرنے والے”۔ اور چونکہ یہ اَشیاء بہت چھوٹی یعنی خوردبینی سائز کی ہوتی ہیں اِس لئے اِن کی شکلیں بھی مشکل قسم کی ہوتی ہیں اور اکثر بدلتی بھی رہتی ہیں۔

پردہٴ بصارت کے آگے جو چھوٹے چھوٹے ذرات  نظر آ رہے ہیں اِن کا سایہ پردے پر بنتا ہے جو انسان کو نظر اتا ہے۔

اِس تصویر ایک بہت بڑا فلوٹر نظر آرہا ہے، اِس طرح کے فلوٹر نظر پر بھی اثر انداز ہوتے ہیں

  • سب سے زیادہ عام وجہ تو یہ ہے کہ وٹریَس کی ساخت میں خرابی ہو جاتی ہے۔ سارا وٹریَس یا اُس کے کُچھ حصے خراب ہو کر جَیلی کی بجائے  گاڑھا محلول بن جاتے ہیں۔ اُس محلول میں جو ذرات یا  پروٹین کے دھاگے ہوتے  ہیں وہ مختلف شکلوں میں نظر آنے شروع ہو جاتے ہیں۔

  • دوسری بڑی اہم وجہ پی وی ڈی PVD ہے۔ یہ وہ کیفیّت ہے جس میں وٹریَس سکڑ  کر آگے کی طرف آجاتا ہے اور پردے سے اُکھڑ جاتا ہے۔ جیسا کہ نیچے کی تصاویر میں نظر آ رہا ہے۔

اِس تصویر میں وِٹریَس کے اُکھڑنے کا آغاز ہو گیا ہے.

اِس تصویر میں تقریباً سارا وِٹریَس سکڑ کر آگے آگیا ہے.

  • عموماً درجِ ذیل حالات میں PVD ہو جاتی ہے:

o        سفید موتیا کے اپریشن کے بعد

o        لیزر لگنے کے بعد

o        شوگر ہو جانے کے بعد

o        جن لوگوں کی عینک کا منفی نمبر کافی زیادہ ہو

  • عمر کے بڑھنے سے جیسے جسم  کے سارے حصوں میں تبدیلیاں آتی ہیں اِسی طرح وِٹریَس بھی بزرگی اختیار کرنے لگتا ہے۔ یا یوں کہیے کہ جس طرح اللہ رب العزت باقی امانتیں واپس لینی شروع کر دیتا ہے اُسی طرح آنکھوں کی نعمتوں کی آہستہ آہستہ واپسی شروع ہو جاتی ہے۔
  • مختلف قسم کی چوٹیں  آنے کے بعد اکثر فلوٹرز بھی ظاہر ہو جاتے ہیں۔
  • آنکھ اندر خون کا رِس آنا فلوٹرز کا ایک اہم سبب ہے۔ اِس کی وجہ چوٹ بھی ہو سکتی ہے، اور جسم کی مختلف بیماریاں بھی۔ اِن میں سے سب سے اہم بیماری شوگر کی بیماری ہے۔ اِ س بیماری میں پردہٴ بصارت کی خون کی نالیاں بیمار ہو جاتی ہیں جس سے اُن کے اندر سے خون لیک ہو کر وِٹریَس کے اندر آجاتا ہے جو کہ اصل میں شفاف ہوتا ہے۔ یہ خون مختلف شکلوں میں نظر اتا ہے۔ اگر انتہائی قلیل مقدار میں ہو تو صرف اُس کے سیل ذرات کی شکل میں نظر آتے ہیں، اِس سے زیادہ ہوتو بڑے دھبوں کی شکل میں ، اگر بہت زیادہ تو سُرخ دھند کی شکل میں ، اور اگر پورا وِٹریَس ہی بھر گیا ہو تو بالکل نظر ہی نہیں آتا۔    
  • آنکھ کے اندرونی حصوں کی سوزش فلوٹرز کا اہم اور عام سبب ہے۔ خاص طور پر   Uveitis اِس کا اہم  سبب ہے۔  سوزش  کی  یہ قسم بڑی مدھم رفتار سے آگے بڑھتی ہے اور مختلف سائزوں کا سبب بنتی ہے۔  

کیا فلوٹرز کا علاج کرانا ضروری ہے؟

  • اگر مختصر ترین الفاظ میں جواب دینا ہو تو جواب یہ ہے  کہ “اِن کے علاج کی کوئی ضرورت نہیں ہوتی“۔ لیکن اتنا اِختصار نظر لیوا بھی ثابت ہو سکتا ہے۔ وجہ یہ کہ  فلوٹرز دیکھنے والے لوگوں کی عظیم اکثریت کو تو  یہ کوئی نقصان نہیں پہنچاتے لیکن جن کو پہنچاتے ہیں اُن کو شدید نقصان پہنچاتے ہیں۔ اِس لئے یہ فیصلہ کرنا ضروری ہوتا ہے کہ آیا یہ وہ نقصان پہنچانے والی قسم تو نہیں ہے۔
  • فلوٹرز میں سے کئی وقت کے ساتھ خون میں جذب ہو کر چھوٹے ہو جاتے ہیں، اور بہت  سے  آہستہ آہستہ اپنی جگہ بدل لیتے ہیں جس سے وہ بہت کم نظر آتے ہیں۔چنانچہ اِس طرح کے فلوٹرز کے علاج کی قطعاً کوئی ضرورت نہیں ہوتی۔
  • ایک اور حقیقت یہ ہے کہ آہستہ آہستہ انسانی نفسیات اُسے قبول کر لیتی ہے اور انسانی ذہن اُنھیں بھول جاتا ہےجس سے اُن کے باعث پیدا ہونے والی پریشانی انتہائی کم ہو جاتی ہے۔چنانچہ اِس صورتِ حال میں بھی علاج کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔​

اِن کا علاج کرانا کب ضروری ہو جاتا ہے؟

  • اگر فلوٹرز اچانک ظاہر ہوں۔  
  • اگر فلوٹرز کی تعداد بڑھنا شروع ہو جائے۔
  • اگر فلوٹرز نظر آنے کا دورانیہ بہت زیادہ بڑھ جائے۔
  • اگر فلوٹرز کے ساتھ چمک بھی نظر آنے لگے۔
  • اگر فلوٹرز کے ساتھ درد  بھی ہونے لگے۔ 
  • اگر نظر میں نمایاں دھندلا پن بھی آجائے۔
  • اگر فلوٹرز کے علاوہ کسی ایک سائیڈ پر نظر بھی کم ہو جائے۔

اِن کا علاج کس طریقے سے کیا جاتا ہے؟

  • ابھی تک فلوٹرز کو ختم کرنے والی کوئی دوائی نہیں دریافت ہو سکی۔  نہ کھانے والی اور نہ ہی کوئی قطروں کی شکل میں استعمال ہونے والی۔  
  • بعض بڑے فلوٹرز کے لئے لیزر استعمال کیا جاتا ہے۔ اگرچہ یہ علاج اپنےساتھ کُچھ خدشات بھی رکھتا ہے۔ اِسی لئے اِس طریقے سے فلوٹرز کو ختم کرنے کی کو شش صرف اُس وقت کی جانی چاہئے جب فلوٹرز بہت بڑے ہوں اور بہت زیادہ مشکل کا باعث بن رہے ہوں۔ 

  • جو فلوٹرز خون کے باعث ہوں اُن کے عموماً جذب ہو جانے کا قوی امکان ہوتا ہے۔ اِس لئے انتظار کیا جانا چاہئے۔ اِسی طرح جو آنکھ کی اندرونی سوزش کے باعث بن جاتے ہیں اُن کا بھی وقت کے ساتھ غیب ہو جانے کا قوی امکان ہوتا ہے۔ لیکن اِن کے بڑا ہونے اور لمبے عرصہ تک غیب نہ ہونے کی صورت میں وٹریکٹومی اپریشن کر کے اِن کو ختم کیا جاتا ہے۔  
  • اصل میں فلوٹرز پیدا کرنے کا بیماری کا علاج اہم ہوتا ہے۔ مثلاً Uveitis کا علاج ضروری ہوتا، اگر آنکھ کے پردے میں خرابی آ گئی ہو تو اُس کا علاج کرنا ضروری ہوتا ہے، اگر آنکھ کے اندر خون لیک ہو گیا ہو تو اُس کا علاج کیا جانا چاہئے، اور اُن جھلیوں اور خون کی ابنارمل نالیوں کا علاج کیا جانا چاہئے جن کی وجہ سے خون لیک ہوتا ہے، 
  • اگر آنکھ کے پردے میں نقصان ہوا ہے مثلاً پھٹ گیا ہے یا اُس میں سوراخ ہو گیا ہے یا اُکھڑ گیا ہے تو اُس کا علاج کیا جانا ضروری ہوتا ہے۔   

اگرآپ فلوٹرز سے متعلق مزید کوئی سوال پوچھنا چاہتے ہوں تو اُس کو کمنٹ کے خانے میں لکھ کر پوسٹ کر دیں انشاءاللہ انہی صفحات میں جواب دینے کی کوشش کی جائے گی۔ اسی طرح اپنی رائے، تبصرہ یا تجویز کو بھی کمنٹ میں لکھ کر پوسٹ کردیں میں بہت ممنون اور مشکور ہوں گا۔

47 Replies to “Floater in front of eyes آنکھوں کے سامنے مختلف داغ نظر آنا”

  1. Asslam U Alaikum Doctor Sb
    Mera naam Hassan hai aur mere age 24 year. Doctor Sb mene kafi waqt se white line notice ki the jb mn aasman p dhekhta tha.mein nearsighted ki glases phinta hn takreban 15 saal se. (Mere khyal floaters​) Aj se 2 hafte phle mene wo lines zyada notice ki aur 2 doctor ki pas gya unhone check up kiya aur aik ne kha parde p sojish hai aur dosre ne kaha ki parde khushk hain us lye ap ko ye floaters nazar aa rahe hain aur un docters ne mujhe nepafenic 0.1% eye drops dye hain jin ko use karne ki baad ab mein floaters zyada mehsoos kar raha hn. Please guide karen ki mujhe kiya karna chahye. Mein kafi din se pareshan hon aur aaraam bhi thek se nh kar raha hon is pareshane ki waja se.

اگر کوئی سوال آپ پوچھنا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں۔ اپنی رائےیا تجویز سے مجھے آگاہ فرمانا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں میں انشاءاللہ جلد از جلد آپ سے رابطہ کروں گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.