یہ ہے وہ آزاد معاشرہ جس کیلئے ہمارے آزاد خیال ترستے ہیں.

سپریم کورٹ بھی بےبس ہے اور پارلیمنٹ بھی!!!

بھارت نے فحش ویب سائٹس پر عائد پابندی ہٹا دی

بھارت میں عوام کے شدید ردعمل کے بعد حکومت نے فحش مواد پر مبنی 857 مفت ویب سائٹس دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔
بھارت کی سرکاری خبر رساں ایجنسی پریس ٹرسٹ آف انڈیا کے مطابق انٹرنیٹ کی سہولت مہیا کرنے والی کمپنیوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ اُن URLs کو بند نہ کیا جائے جن میں ’بچوں کے حوالے سے کوئی فحش مواد موجود نہیں ہے۔‘
حکومت نے اخلاقی پولیس کا کردار ادا کرنے کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس اقدام کا مقصد ایسی ویب سائٹوں تک بچوں کی رسائی کو روکنا تھا۔
رواں سال جولائی میں سپریم کورٹ نے بچوں کے حوالے سے فحش مواد کی حامل ویب سائٹوں کو بند کرنے میں ناکامی پر حکومت کی صلاحیتوں پر سوال اٹھایا تھا۔
وزیرِ مواصلات و انفارمیشن ٹیکنالوجی روی شنکر پرساد نے منگل کو اعلیٰ حکام سے ملاقات میں فحش ویب سائٹوں پر پابندی کے فیصلے کا جائزہ لیا گیا۔
اس ملاقات میں فیصلہ کیا گیا کہ فوری طور پرانٹرنیٹ کی سہولت مہیا کرنے والی کمپنیوں سے کہا جائے کہ اُن ویب سائٹس کو بند نہ کیا جائے جن میں بچوں کے حوالے سے کوئی فحش مواد نہیں ہے۔
دوسری جانب انٹرنیٹ کمپنیوں کا نئے احکامات کے حوالے سے کہنا ہے کہ یہ مناسب نہیں ہیں۔
بھارت کے اخبار ٹائمز آف انڈیا سے بات کرتے ہوئے بھارت میں انٹرنیٹ سروس پرووائیڈرز ایسوسی ایشن کے سربراہ راجیش چاریہ نے کہا کہ ’حکومت ہمارے اوپر یہ ذمہ داری کس طرح ڈال سکتی ہے کہ ہماس بات کا خیال رکھیں کہ کس ویب سائٹ پر بچوں کے حوالے سے فحش مواد ہے اور کس پر نہیں ہے۔‘
فحش ویب سائٹوں پر پابندی کی خبر کے بعد بھارت میں سماجی رابطوں کی ویب سائٹوں پر ایک ہنگامہ شروع ہو گیا تھا۔ اس میں کئی اہم سیاسی رہنماؤں اور سول سوسائٹی کے اراکین نے بھی اس حکومتی فیصلے کو تنقید کا نشانہ بنایا۔
بھارتی حکومت کا کہنا ہے کہ یہ پابندی سپریم کورٹ کے احکامات کی تعمیل کی روشنی میں لگائی تھی ورنہ وہ انٹرنیٹ پر رسائی کی مکمل آزادی پر یقین رکھتی ہے۔
وزیرِ مواصلات و انفارمیشن ٹیکنالوجی روی شنکر پرساد نے پی ٹی آئی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا:’میں کچھ مخالفین کی جانب سے لگائے گئے اس الزام کی سختی سے تردید کرتا ہوں کہ یہ طالبانی حکومت ہے۔ ہماری حکومت میڈیا کی آزادی کی حمایت کرتی ہے اور ہماری حکومت نے انٹرنیٹ پر رسائی کی آزادی کو ہمیشہ تسلیم کیا ہے۔‘

اگر کوئی سوال آپ پوچھنا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں۔ اپنی رائےیا تجویز سے مجھے آگاہ فرمانا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں میں انشاءاللہ جلد از جلد آپ سے رابطہ کروں گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.