زبیر منصوری کی خودکلامی 

ہم کریں بات دلیلوں سے تو رد ہوتی ہے
ان کے ہونٹوں کی خاموشی بھی سند ہوتی ہے
سراج الحق کرپشن کو ہدف بنائے
ٹرین مارچ کرے
اسے بہترین فنانشل منیجمنٹ اور ایمانداری کے ایوارڈ ملیں
اس کےکارکن وزراء دوسری جماعت کے سربراہوں سے ستائش اور شاباش پائیں
وہ کرک میں کرپشن پر ضرب لگائے یا کراچی میں اس کے خلاف اعلان جہاد کرے
وہ کرپشن کے نا سور کے خلاف دھرنے دے یا بار روم میں چیخے اور چلائے
وہ کرپشن کے خلاف کورٹ جائے یا کالی پٹیاں باندھے
اس کی ساری دلیلیں رد ہوں اور کوئی ابھی ہونٹ بھی نہ کھولے تو خبر پہلے بن جائے؟
کوئی اپنے دائیں بائیں کرپٹ لوگوں اور ضمیر فروشوں کو لے کر کھڑا ہو جائے تو کوئی اسے متوجہ کرنے کو بھی گناہ سمجھے
تمہی کہو یہ انداز گفتگو کیا ہے؟
میڈیا اپنا اعتبار کھو رہا ہے ڈیٹا بتا رہا کہ کہ آنے والی نسل ٹی وی سے یو ٹیوب کی طرف منتقل ہو رہی ہے الیکٹرونک سے ڈیجیٹل کی طرف رجوع بڑھتا جا رہا ہے
پھر تیرا کیا بنے گامیڈیا؟
یاد رکھنا میڈیا گرد کا طوفان اٹھا کر زیادہ لوگوں کو کچھ دیر تک دھوکہ تو دے سکتا ہے او کچھ لوگوں کو زیادہ دیر تک بھی دھوکہ میں رکھ سکتا ہے مگر وہ زیادہ لوگوں کو زیادہ عرصہ تک دھوکہ میں نہیں رکھ سکتا
حال کا لکھنے والا چاہے جو بھی لکھے وقت کا بے رحم مورخ جب سچ لکھے گا تو وہ سراج الحق کو دیانتداری کا پیمانہ قرار دے گا وہ سراج الحق کو ان لوگوں میں شامل کرے گا جو دامن نچوڑ دیں تو فرشتے وضو کریں
وہ لکھے گا کہ جب سراج الحق اور ایک سراج صاحب پر ہی کیا موقوف ہزاروں دیانتداروں پر مشتمل ایک گروہ موجود تھا اس وقت اس بد نصیب قوم نے اپنے لئے شریفوں زرداریوں اور ترینوں کا انتخاب کیا تھا
مورخ کے ہاتھ اس وقت کپکپا جائیں گے اور اس کی انکھیں بھیگ جائیں گی جب وہ دریافت کرے کا کہ سراج الحق کی ٹیم میں وہ نعمت اللہ خان بھی موجود تھا جس نے ساری نظامت کے اختتام پر ایک چیک کاٹ کر ساری تنخواہ صدقہ کر دی تھی اور ایسے دامن جھاڑ کر گھر چلا گیا تھا جیسے منصب و اختیار اور مال و اسباب نہ ہوں کوئی بلا ہو
مورخ میرے عنایت اللہ کو بھلا کیسے بھولے گا جسے اس کی ایمانداری پر اس کا وزیر اعلی ہر اہم کمیٹی کا سربراہ بنا کر مطمئن ہو جاتا تھا
میری دعا ہے کہ میرا سراج میرا امیر میرا قائد میرا ہمدرد و غمخوار قائد اپنی بے نیازی پر قائم رہتے ہوئے اپنی پارٹی کے غیر معمولی کردار کا پرچارک کر سکے۔
کیونکہ سب کو اپنا ڈھول خود پیٹنا ہوگا کوئی کسی کا ڈھول نہیں پیٹے گا

خود کلامی۔۔۔زبیر منصوری

Author: Dr Asif Mahmood Khokhar

Senior eye surgeon with special interest in Vitreoretinal, Oculoplastic, Laser, and Phaco surgeries

Leave a Reply

Be the First to Comment!

اگر کوئی سوال آپ پوچھنا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں۔ اپنی رائےیا تجویز سے مجھے آگاہ فرمانا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں میں انشاءاللہ جلد از جلد آپ سے رابطہ کروں گا۔