تمهارا” اور “یوسف” کا خدا ایک ہی ہے.

کیا​ “تمهارا” اور “یوسف” کا خدا ایک ہی نہیں ہے؟
چاہا کہ یوسف کو مار دیں، یوسف بچ گئے.

چاہا کہ ان کی نشانیوں کو مٹا دیں، وہ اور بهی قیمتی ہو گئیں.

چاہا کہ انکو بیچ دیں تاکہ غلام ہو جائے، بادشاہ بن گئے.

چاہا کہ باپ کے دل سے انکی محبت نکل جائے، محبت اور زیادہ ہو گئ.

لوگوں کی چال سے کبیدہ خاطر نہیں ہونا چاہیئے….

کیوں کہ خدا کا ارادہ ہر ارادے سے بلند ہے.

یوسف جانتے تهے کہ سبهی دروازہ بند ہیں، لیکن اسکے باوجود خدا کی خاطر؛ بند کیئے ہوئے دروازوں کی طرف دوڑے…. اور سبهی بند دروازے انکے لئے کهل گئے.

*اگر دنیا کے سبهی دروازے تمهارے لئے بند کر دئے جائیں، بند دروازوں کی طرف بڑهو….*
کیوں کہ  “تمهارا” اور “یوسف” کا خدا ایک ہی ہے.

اگر کوئی سوال آپ پوچھنا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں۔ اپنی رائےیا تجویز سے مجھے آگاہ فرمانا چاہیں تو یہاں لکھ کر پوسٹ کر دیں میں انشاءاللہ جلد از جلد آپ سے رابطہ کروں گا۔

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.